We are committed to reporting the facts and in all situations avoid the use of emotive terms.

بریکنگ نیوز
english logo

کرپشن کے خاتمہ کیلئے قائم انٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ ہی کرپشن اور لاقانونیت کی آماجگاہ

کرپشن کے خاتمہ کیلئے قائم انٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ ہی کرپشن اور لاقانونیت کی آماجگاہ

کرپشن میں بدنام ترین افسر ADM ریاست نے ساتھی خاتون افسر ADL ظل ہما کی تصاویر اور کرپشن کے راز افشاء کر دئے
ADL نے غصے میں ADM کے ساتھ اپنے ملازمین کیخلاف بھی ریگولر انکوائری شروع کروا دی ، لیگل گروپ حمایت میں نکل آیا
مرضی کے نتائج نہ ملنے پر انکوائری بدلتی رہی ، لیگل گروپ نے ظل ہما کی دوست DDI شیخوپورہ نوشین کے پاس انکوائری لگوا لی
PTI دور حکومت میں بھی قانون کے ساتھ کھلواڑ، افسران میٹنگ میٹنگ کھیلنے اور ساکھ بچانے کیلئے سب اچھا ہے کی رپورٹ دینے میں مگن
لاہور (قیصر مغل/یو این این)پی ٹی آئی حکومت کا کرپشن سے پاک پاکستان اور میرٹ و قانون کی بالا دستی کا نعرہ و خواب چکنا چور ہو گیا ، کرپشن کے خاتمہ کیلئے قائم انٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ ہی کرپشن اور لاقانونیت کی آماجگاہ بن گئی ۔انٹی کرپشن کے بدنام اسسٹنٹ ڈائریکٹر مانیٹرنگ لاہور ریجن چوہدری ریاست علی نے اپنی ہی خاتون کولیگ اسٹنٹ ڈائریکٹر ظل ہما کی تصاویر اور راز افشاء کر دئے ، اے ڈی لیگل ظل ہما نے چراغ پاء ہو کرہراساں کرنے کے الزامات کے تحت محکمانہ انکوائری کی بجائے اے ڈی ایم کے ساتھ اپنے ہی ملازمین کی ریگولر انکوائری E/546/18 لگوا دی ۔اس ایشو پر انٹی کرپشن میں لیگل افسران کی گروپ بندی ہو گئی ہے ، لیگل افسران نے اختیارات اور اثر ورسوخ استعمال کر کے انکوائری کے لئے اے ڈی ظل ہما کی دوست ڈی ڈی آئی شیخوپورہ مس نوشین کے آرڈر کروا لئے جس سے انصاف کے راست بند ہو گئے ہیں ۔اس حوالے سے دی فرنٹیئر پوسٹ کی تحقیقاتی رپورٹ اور ذرائع کی گفتگو کے بعد یہ امر سامنے آیا ہے کہ اسٹنٹ ڈائریکٹر مانیٹرنگ چوہدری ریاست علی کے اسسٹنٹ دائریکٹر لیگل ظل ہما کے ساتھ اختلافات تھے اور اسی رنجش میں اے ڈی ایم ریاست نے اے ڈی ایل ظل ہما سمیت دیگر ملازمین کی کرپشن کے حوالے سے تفصیل اور کچھ تصاویر اپنے کار خاص جونیئر کلرک تنویر سجاد کو فراہم کی تاکہ وہ اسے اخبارات میں شائع کروا سکے ، جونیئر کلرک نے ایک مقامی اخبار کے نمائندے کو وہ تصاویر اورتفصیل فراہم کر دی جس نے موقف جاننے کیلئے جب اے ڈی ایل ظل ہما کو فون کیا تو اس کے بعد انٹی کرپشن لاہور ریجن میں دفتری ماحول انتہائی کشیدہ ہو گیا ۔اے ڈی ایل ظل ہما نے معاملہ کو ہراساں کرنے کا رنگ دے کر پولیس میں مقدمہ درج کروانے یا ملازمین کی محکمانہ انکوائری کروانے کی بجائے اختیارات کا ناجائز استعمال اور انٹی کرپشن لیگل گروپ کے افسران کا اثرورسوخ استعمال کرتے ہوئے اس ایشو کو انٹی کرپشن کی ریگولر انکوائری E/546/18 میں تبدیل کروا لیا اور ڈائریکٹر لاہور ریجن عبدالشکور سے سفارش کر کے اپنی مرضی کے آئی او رئیس احمد خان کے پاس لگوا لی ، رئیس خان نے ملازمین سے بیان لئے تاہم اس کے بعد وہ حج کی سعادت کیلئے چلے گئے ۔رئیس خان کی عدم موجودگی میں ان کی پوسٹ کا ایڈیشنل چارج آغا محمود انسپکٹر ہیڈ کوارٹر انٹی کرپشن کو مل گیا ، انٹی کرپشن لیگل گروپ جس میں ڈپٹی ڈائریکٹر لیگل چوہدری ریاض ، اسسٹنٹ دائریکٹر لیگل سعدنعیم ،اسسٹنٹ دائریکٹر لیگل میڈم سعدیہ اور اسسٹنٹ دائریکٹر لیگل ملک نوید سمیت دیگر شامل ہیں کی جانب سے انکوائری افسر پر دباؤ ڈالا گیا وہ باقاعدہ انکوائری کی بجائے ملازمین کیخلاف رپورٹ میں مقدمہ کے اندراج کا لکھ کر ڈائریکٹر کو بھیج دے جس پر اس نے انکار کر تے ہوئے سرنڈر کر دیا ۔ بعد ازاں انکوائری ڈپٹی ڈائریکٹر انوسٹی گیشن گوندل کے پاس آئی انہوں نے بھی لیگل گروپ کا دباؤ نہ مانا اور انکوائری واپس ڈائریکٹر کو بھیج دی جس کے بعد لیگل گروپ نے انکوائری ظل ہما کی دوست ڈپٹی ڈائریکٹر انوسٹی گیشن شیخوپورہ میڈم نوشین کے پاس لگوا لی جو ظل ہما کے دفتر میں بیٹھ کر اسی کی منشاء کے مطابق انکوائری کر رہی ہے۔ یہ امر قابل غور ہے کہ موجود حکومت میرٹ اور قانون کی بالا دستی کا نعرہ مار کی اقتدار میں آئی اور اس دور حکومت میں بھی قانون کے ساتھ کھلواڑ معمول بن چکا ہے جبکہ انٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ کے افسران بالا سابق دور حکومت کی طرح میٹنگ میٹنگ کھیلنے اور اپنی ساکھ بچانے کیلئے سب اچھا ہے کی رپورٹ دینے میں مگن ہیں ۔

Translation

اداریہ

آج کی تصویر

مقبول ترین

Whatsapp نیوز سروس

Advertise Here

ضرورت نمائیندگان

روزنامہ جواب

ضرورت نمائیندگان

Coverage

Currency

WP Facebook Auto Publish Powered By : XYZScripts.com