We are committed to reporting the facts and in all situations avoid the use of emotive terms.

بریکنگ نیوز
english logo

پنجاب حکومت نے اہم فصلوں کی پیداوار بڑھانے کےلئے اہداف دیدئے ہیں، لنگڑیال

پنجاب حکومت نے اہم فصلوں کی پیداوار بڑھانے کےلئے اہداف دیدئے ہیں، لنگڑیال

ملتان (یو این این )وزیر زراعت پنجاب ملک نعمان احمد لنگڑیال نے کہا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان کی قیادت میں زرعی شعبہ کی ترقی ،کاشتکاروں کی خوشحالی اور لاگت کاشت میں کمی کے لئے متعدد اقدامات کئے جا رہے ہیں تاکہ زراعت کو ایک مثالی شعبہ بنایا جا سکے۔اس مقصد کے حصول کیلئے حکومت پنجاب نے محکمہ زراعت کو اہم فصلوں کی پیداوار بڑھانے کے لیے واضح اہداف دئیے ہیں۔صوبہ پنجاب ملک میں فوڈ سیکیورٹی اور غربت کے خاتمہ میں کلیدی کردار ادا کر تا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سنٹرل کاٹن ریسرچ انسٹیٹیوٹ ملتان میں کاٹن کراپ مینجمنٹ گروپ کے پانچویں اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔اجلاس میں پروفیسر ڈاکٹر آصف علی وائس چانسلر محمد نواز شریف زرعی یونیورسٹی، کاٹن کمشنر ڈاکٹر خالد عبداللہ، سید ظفر یاب حیدر ڈائریکٹر جنرل زراعت (توسیع)، رائے مدثر عباس ڈائریکٹر انفارمیشن زراعت پنجاب،ڈاکٹر زاہد محمود ڈائریکٹر سی سی آر آئی، ڈاکٹر صغیر احمد ڈائریکٹر کاٹن،راو¿شاہداختر،سلیم ناصر، میپکو،محکمہ انہار،موسمیات، پی سی پی اے، کھاد بنانے والی کمپنیوں کے نمائندگان ،سہیل محمود ہرل،چوہدری محمد ارشد ،عذرا محمود شیخ،رانا افتخار، رانا ضیاءالحق سمیت محکمہ زراعت توسیع و پیسٹ وارننگ کے ڈپٹی ڈائریکٹرز نے شرکت کی۔انہوں نے مزید کہا کہ زراعت کو ملکی معیشت میں غیر معمولی اہمیت حاصل ہے۔کاشتکاروں کی خوشحالی حکومت پنجاب کی ترجیحات میں شامل ہے۔صوبہ پنجاب کی کل آبادی کا 45فیصد جبکہ دیہی علاقوں کے 65فیصد افراد کا روزگار زراعت سے وابستہ ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ کپاس کی ملکی مجموعی پیداوار کا قریباً 72 فیصد پنجاب میں پیدا ہوتا ہے۔ صوبہ میں امسال 4.8 ملین ایکڑ رقبہ پر کپاس کی کاشت کی گئی ہے۔ امسال کپاس کی حالت پچھلے سال کی نسبت قدرے بہتر ہے۔رواں سیزن کے دوران پھ±ٹی کے سودے 3600تا4000روپے فی من ہورے ہیں۔صوبائی وزیر نے مزید کہا کہ کاشتکاروں کو معیاری زرعی ادویات و کھادوں کی دستیابی یقینی بنانے کیلئے ملاوٹ کے خلاف حکومت زیرو ٹالرنس پالیسی پر عمل پیرا ہے۔فرٹیلائزر کنٹرولر اور پیسٹی سائیڈز انسپکٹرز صوبہ بھر میں کھادوں و زرعی ادویات کے معیار کو برقرار رکھنے کیلئے باقاعدگی سے سیمپلنگ کر رہے ہیں اور خفیہ اطلاع پرریڈز بھی کیے جا رہے ہیں۔پیسٹی سائیڈز انسپکٹرز نے صوبہ میں جولائی 2018سے اب تک پیسٹی سائیڈز کے 33کامیاب ریڈزکرکے ایف آئی آرزکااندراج کرایا اور85لاکھ 9ہزار روپے مالیت کی جعلی زرعی ادویات قبضہ میں لیکر بطور مال مقدمہ حوالہ پولیس کیں۔فرٹیلائزر کنٹرولرز نے صوبہ میں2018کے دوران ریڈز کے ذریعے23لاکھ52 ہزار روپے مالیت کی جعلی کھادیں قبضہ میں لیکر حولہ پولیس کیں۔ قبل ازیں اجلاس کے شرکائ کو بریفنگ کے دوران بتایا گیا کہ کاٹن کراپ مینجمنٹ گروپ کے اجلاسوں کا باقاعدگی سے انعقاد کیا جارہا ہے۔ کپاس کی فصل پر حملہ آور ہونے والے مختلف کیڑوں اور بیماریوں کی مانیٹرنگ کیلئے ریسرچ اور پیسٹ وارننگ سٹاف پر مشتمل ٹیمں تشکیل دی گئی ہیں جبکہ ضلعی سطح پر کمیٹیاں بھی قائم کی گئیں۔ کپاس کی بہتر نگہداشت کیلئے ایڈیشنل سیکرٹری زراعت( ٹاسک فورس) پنجاب کی سربراہی میں ٹیکنیکل ایڈوائزری کمیٹی کے ہفتہ وار اجلاس باقاعدگی سے منعقدکئے جارہے ہیں۔گزشتہ سال کی طرح امسال 54 تحصیلوں میں 50 ایکڑ فی تحصیل پی بی روپس کے نمائشی پلاٹ مفت لگائے گئے ہیں۔ گلابی سنڈی کی مانیٹرنگ کیلئے یونین کونسل کی سطح پر سیکس فیرامون ٹریپس کی تنصیب بھی کی گئی ہے۔ کپاس کی زیادہ پیداوار کے حصول کیلئے گزشتہ سال کی طرح اس سال بھی انعامی مقابلہ جات کا انعقاد کیا جارہا ہے۔ ملتان، بہاولپور اور ڈیرہ غازیخان ڈویڑنز کے 22ہزار 347کسانوں کو 50 فیصد سبسڈی پر 23.518ملین روپے کی لاگت سے کپاس کا بیج فراہم کیا گیا۔ کپاس کے کاشتکاروں کی بروقت آگاہی کے لیے ریڈیو ،ٹی وی اور پرنٹ میڈیا پر بھی بھرپور موثر مہم جاری ہے۔کپاس کی اعلیٰ کوالٹی کے حصول کے لئے محکمہ زراعت کپاس کی چنائی کرنے والی خواتین کو تربیت فراہم کر رہا ہے جس کی وجہ سے اس سال آلائشوں سے پاک کپاس حاصل ہونے کی توقع ہے۔
**

Translation

اداریہ

آج کی تصویر

مقبول ترین

Whatsapp نیوز سروس

Advertise Here

ضرورت نمائیندگان

روزنامہ جواب

ضرورت نمائیندگان

Coverage

Currency

WP Facebook Auto Publish Powered By : XYZScripts.com