We are committed to reporting the facts and in all situations avoid the use of emotive terms.

بریکنگ نیوز
english logo

نون لیگی حکومت نے لاہورمیں 70فیصد سے زائد سبزہ اور درخت ختم کردیئے،مشیر وزیر اعظم

نون لیگی حکومت نے لاہورمیں 70فیصد سے زائد سبزہ اور درخت ختم کردیئے،مشیر وزیر اعظم

سموگ کی روک تھام کیلئے 14نکات پر مبنی ایکشن پلان تیارہے ، تحصیل کی سطح پرمانیٹرنگ کمیٹیاں قائم کردیں ، ملک امین اسلم
حکومت نے 25کروڑ روپے کے فنڈ سے اگلے سال زگ زیگ ٹیکنالوجی سے اینٹوں کے بھٹے لگانے کامنصوبہ بنایا ہے
بھٹہ ایسوسی ایشن نے 20اکتوبر سے 30اکتوبر کے درمیان بھٹے بند رکھنے کا فیصلہ کیا ہے، ترجمان وزیر اعلیٰ ڈاکٹر شہباز گل

لاہور(یو این این ) نون لیگ کی حکومت نے پچھلے دس سالوں میں لاہور شہر میں میگا ڈویلپمنٹ منصوبوں کی آڑ میں70فیصد سے زیادہ سبزہ اور درخت ختم کردیئے۔ وزیراعظم عمران خان کے ویژن کے مطابق لاہور شہرکو دوبارہ گرین سٹی میں تبدیل کریں گے، شہر میں ہر سال چھا جانے والے سموگ کی روک تھام کے لئے موجودہ حکومت موثر اقدامات کررہی ہے۔وزیراعظم کا گرین کلین پاکستان پروگرام سموگ اور آلودگی جیسے دیگر مسائل حل کرنے میں اہم کردار ادا کرے گا۔ ان خیالات کا اظہار موسمیاتی تبدیلی کے امور پر وزیراعظم کے مشیر ملک امین اسلم اور ترجمان وزیراعلی پنجاب ڈاکٹر شہباز گل نے پیر کے روز ڈی جی پی آرمیں منعقدہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ملک امین اسلم نے کہا کہ سموگ کی روک تھام کے لئے 14نکات پر مبنی ایکشن پلان تیارہے ، اس مقصد کے لئے تحصیل کی سطح پر کمیٹیاں قائم کی گئی ہیں جو کہ متوقع سموگ کی صورتحال کو مانیٹرکررہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سموگ کی روک تھام کے لئے ٹری پلانٹیشن ، سالڈویسٹ مینجمنٹ ، لیکوڈ ویسٹ مینجمنٹ، سینی ٹیشن اور صاف پانی کی فراہمی کے منصوبوں پر کام کیا جارہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ فضا میں آلودگی کی سطح کو مانیٹر کرنے کے لئے لاہور میں 11مانیٹرنگ سٹیشن قائم کردیئے گئے ہیں جن میں سے ایک سٹیشن بھارتی پنجاب کی سرحد کے قریب نصب کیا گیا ہے تاکہ بھارتی پنجاب سے آنے والے فصلوں کے مڈ جلانے کے نتیجہ میں آنے والے دھوئیں کو مانیٹرکیا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ سموگ کی وجوہات میں اینٹوں کے بھٹوں کا دھواں ، گاڑیوں سے نکلنے والا دھواں ، انڈسٹریز کا دھواں اور فصلوں کے مڈ جلانے سے پیدا ہونے والا دھواں شامل ہے ان سب وجوہات کو کنٹرول کئے بغیر سموگ کی روک تھام مشکل ہے۔اس موقع پر ترجمان وزیراعلی پنجاب ڈاکٹر شہباز گل نے بتایا کہ بھٹہ ایسوسی ایشن نے فیصلہ کیا ہے کہ اس ماہ 20اکتوبر سے 30اکتوبر کے درمیان بھٹے بند رکھے جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے 25کروڑ روپے کا فنڈ قائم کرنے کا منصوبہ بنایا گیا ہے جس کی مدد سے اگلے سال زگ زیگ ٹیکنالوجی کے ذریعے اینٹوں کے بھٹوں کا 60فیصد تک دھواں کم کیا جاسکے گا۔ نیپال میں اس قسم کے بھٹے قائم کرکے فضائی آلودگی کو کنٹرول کرنے میں مدد لی گئی ہے۔ڈاکٹر شہباز گل نے کہا کہ لاہور کے اردگرد فصلوں کے مڈ جلانے پر بھی پابندی عائد کردی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو سموگ کے حوالے سے آگاہی فراہم کرنے میں میڈیا بڑھ چڑھ کر حکومت کی کوششوں میں ہاتھ بٹائے اور سوسائٹی بھی اپنا کردار ادا کرے۔انہوں نے کہا کہ پنجاب کے تمام ہسپتالوں میں سموگ ڈیسک قائم کئے جارہے ہیں تاکہ سموگ کی وجہ سے استھما کا شکار ہونے والے مریضوں کا بروقت علاج کیا جاسکے۔ حکومت چہرے پر لگانے والے ماسکس کی وافر مقدار میں فراہمی کے لئے بھی اقدامات کررہی ہے ۔ علاوہ ازیں سموگ کے دنوں میں سکول بند کرنے یا کھلے رکھنے کے بارے میں بھی بروقت فیصلہ کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ بھارت سے آنے والے دھویں کو کنٹرول کرنے کے حوالے سے دفتر خارجہ کی سطح پر بھارتی حکومت سے بات چیت کی جارہی ہے۔ترجمان وزیراعلی نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کے ویژن کے مطابق پاکستان کو سرسبز ، صاف ستھرا اور آلودگی سے پاک ملک بنانے کے لئے ہرممکن اقدامات کئے جارہے ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ فیول میں سلفرکی مقدار کی زیادتی کے حوالے سے بھی وزارت پٹرولیم سے رابطہ کرکے کہا گیا ہے کہ وہ اس معاملے کا جائزہ لے ۔ ڈاکٹر شہباز گل نے کہا کہ سموگ جیسے پیچیدہ مسائل میں پچھلی حکومتوں کی غفلت کا عمل دخل ہے ۔ موجودہ حکومت میڈیا اور سوسائٹی کی مدد سے اس سنگین مسئلے کا حل تلاش کرنے کے لئے سموگ کے چھا جانے سے پہلے ہی اپنی ذمہ داری ادا کررہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ سموگ کے حوالے سے حفاظتی اقدامات 20اکتوبر سے 31دسمبر تک جاری رکھے جائیں گے۔

Translation

اداریہ

آج کی تصویر

مقبول ترین

Whatsapp نیوز سروس

Advertise Here

ضرورت نمائیندگان

روزنامہ جواب

ضرورت نمائیندگان

Coverage

Currency

WP Facebook Auto Publish Powered By : XYZScripts.com