We are committed to reporting the facts and in all situations avoid the use of emotive terms.

بریکنگ نیوز
english logo

موسمی اثرات اور ماحولیاتی آلودگی انسانی صحت کیلئے انتہائی مضر ہیں، پروفیسر طیب

موسمی اثرات اور ماحولیاتی آلودگی انسانی صحت کیلئے انتہائی مضر ہیں، پروفیسر طیب

اس سنجیدہ معاملے سے نمٹنے کیلئے شہریوں میں شجر کاری کے فروغ کیلئے شعور بیدار کرنا ہو گا
سموگ کیلئے شہریوں میں حفاظتی تدابیر بارے شعور بیدار کرنا چاہیے، سیمینار سے مقررین کا خطاب
سموگ سے بچاؤ کیلئے لاہور جنرل ہسپتال میں آگاہی سیمینار و واک کا انعقاد ، شہریوں میں ماسک تقسیم

لاہور(یو این این )پرنسپل امیر الدین میڈیکل کالج پروفیسر محمد طیب نے کہا ہے کہ ماحولیاتی آلودگی اور موسمی اثرات انسانی صحت کیلئے انتہائی مضر ثابت ہوتے ہیں اور گزشتہ چند برسوں سے سامنے آنے والا سموگ کا معاملہ ہر شہری کیلئے توجہ طلب ہے ۔انہوں نے کہا کہ اس سنجیدہ معاملے سے نمٹنے کیلئے شہریوں میں شجر کاری کے فروغ کیلئے شعور بیدار کرنا ہو گا اور لوگوں میں حفاظتی تدابیر اختیار کرنے اور شارٹ اور لانگ ٹرم اقدامات کیلئے آگاہی پیدا کرنی ہو گی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے سموگ کے مسئلے پر لاہور جنرل ہسپتال میں منعقد سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر مختلف شعبوں کے پروفیسرز، ایم ایس ڈاکٹر محمود صلاح الدین، ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن رانا محمد شفیق، اے ایم ایس ایڈمن ڈاکٹر جعفر شاہ اور نرسنگ انتظامیہ ،امیر الدین میڈیکل کالج ، نرسنگ سکول اور الائیڈ سکولز کے طلبا و طالبات نرسز کے علاوہ مریضوں کے لواحقین بھی موجود تھے۔پرنسپل ایل جی ایچ نے کہا کہ کوڑے کرکٹ کو آگ لگانے سے لے کر آتش بازی جیسے مشغلے تک ہمارے ماحول کو خراب کیا جا رہا ہے اور یہ آلودگی آگے چل کر فضاء میں "ڈسٹ زون "کا باعث بنتی ہے ،پروفیسر محمد طیب نے کہا کہ اگر عوام فیصلہ کر لیں تو تھوڑی سی کوشش کے ساتھ سموگ جیسی پریشانی سے بچا جا سکتا ہے ،انہوں نے کہا کہ ڈاکٹروں کو اپنے مریضوں کے ذریعے بھی اس پیغام کو عام کرنا چاہیے کہ کیسے ہم اپنے ماحول کو صاف ستھرا رکھ سکتے ہیں۔پرنسپل نے ہسپتال میں منعقدہ سیمینار کو خوش آئند قدم قرار دیا جس سے ڈاکٹروں اور نرسز کیلئے یہ پیغام عام آدمی تک پہنچ سکے گا کہ کیسے وہ خود کو صحت مند ماحول میں زندہ رکھ سکتے ہیں۔سیمینار سے خطاب کر تے ہوئے دیگر مقررین پروفیسر غیاث النبی طیب ، پروفیسر محمد معین، پروفیسر آغا شبیر علی اور ڈاکٹر عرفان ملک نے کہا کہ سموگ دراصل دھند اور دھویں کا مرکب ہے اور یہ فضائی آلودگی بالخصوص کوئلے کے بطور ایندھن استعمال سے شروع ہوئی اس کیلئے ضروری ہے کہ شہری روزانہ کی بنیاد پر زیادہ سے زیادہ پانی کا استعمال کریں ،غیر ضروری طور پر گھروں سے نہ نکلیں اور موٹر سائیکل اور سائیکل سوار ماسک کا استعمال کریں جبکہ خواتین بھی گھروں کی کھڑکیاں اور دروازے بند رکھیں۔بالخصوص فضا ء میں موجود سیلفیٹ ، مونو ایکسائیڈ و دیگر اجزا پھیپھڑوں و دل کے نظام کو متاثر کر سکتے ہیں جس کیلئے مریضوں کوفورا ہسپتالوں سے رجوع کرنا چاہئے ۔سیمینار میں جنرل ہسپتال کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر محمود صلاح الدین نے بھی خطاب کیا اور سیمینار کے انعقاد کو سراہاجبکہ یہ امر قابل ذکر ہے کہ سیمینار کے بعدپنجاب انسٹی ٹیوٹ آف نیورو سائنسز کے بلاک تک آگاہی واک کی گئی جس میں شرکاء نے سموگ سے بچاؤ اور آگاہی کیلئے پلے کارڈز اور بینرز اٹھا رکھے تھے جن پر ماحولیاتی آلودگی کم کرنے اور سموگ سے بچاؤ کے متعلق سلوگن درج تھے،اختتام پر واک کے شرکاء میں انتظامیہ کی طرف سے حفاظتی ماسک بھی تقسیم کیے گئے۔

Translation

اداریہ

آج کی تصویر

مقبول ترین

Whatsapp نیوز سروس

Advertise Here

ضرورت نمائیندگان

روزنامہ جواب

ضرورت نمائیندگان

Coverage

Currency

WP Facebook Auto Publish Powered By : XYZScripts.com