We are committed to reporting the facts and in all situations avoid the use of emotive terms.

بریکنگ نیوز
english logo

لاہور پارکنگ کیس میں حافظ نعمان جبکہ صاف پانی کیس میں مزید 5 ملزمان گرفتار

لاہور پارکنگ کیس میں حافظ نعمان جبکہ صاف پانی کیس میں مزید 5 ملزمان گرفتار

صاف پانی کیس ملزمان کی ملی بھگت سے حکومتی خزانے کو مبینہ طور پر 34کروڑ50لاکھ روپے کا نقصان پہنچا
حافظ نعمان کو ضمانت منسوخ پراحاطہ عدالت سے پکڑا گیا ، کروڑوں روپے کے ٹھیکے منظور نظر افراد کو دینے کا الزام
لاہور(یو این این)نیب لاہور کی ایک اور بڑی کارروائی صاف پانی کمپنی کرپشن کیس میں پیشرفت کے طور پر منظر عام پہ آئی جس کے مطابق مذکورہ کیس میں مبینہ طور پر بدعنوانی کے الزام پر 5ملزمان کو پنجاب کے مختلف علاقہ جات سے گرفتار کر کے جوڈیشل ریمانڈ پر جیل منتقل کر دیا گیا۔ گرفتارملزمان میں پبلک ہیلتھ ڈیپارٹمنٹ کے سابق ڈپٹی سیکرٹری ملزم ظہور احمد ڈوگر، سابق چیف ریزیڈنٹ انجنیئر میجر (ر) عدنان آفتاب، ریزیڈنٹ انجنئیر سید مسعود الحسن، معین الدین اور ریزیڈنٹ انجنئیر محمد یونس شامل ہیں۔ ملزمان کی دیگر شریک ملزمان سے آپس کی ملی بھگت سے حکومتی خزانے کو مبینہ طور پر 34کروڑ50لاکھ روپے کا نقصان پہنچا۔ صاف پانی کمپنی کیس میں ملزم قمر الاسلام کے علاوہ دیگر 4ملزمان کو نیب لاہور کی جانب سے اپریل 2018میں گرفتار کیا گیا تھا تاہم صاف پانی کمپنی کیس میں نیب لاہور افسران کی تحقیقات مکمل کی جا چکی ہیں اور مذکورہ کیس کا کرپشن ریفرنس آخری مراحل میں داخل ہو چکا ہے جسے عنقریب احتساب عدالت کے روبرو دائر کر دیا جائے گا ، دریں اثنا لاہور پارکنگ کمپنی کیس میں مبینہ کرپشن کے الزام میں لاہور ہاء کورٹ کیجانب سے ضمانت قبل از گرفتاری کی منسوخی پر ملزم حافظ نعمان احاطہ عدالت کے باہر سے گرفتارکر لیا گیا ، ملزم حافظ نعمان پر بطور چیئرمین مبینہ طور پر کروڑوں روپے کے غیرقانونی ٹھیکے منظورِ نظر افراد کو دینے کا الزام ہے۔کمپنی چیئرمین کا عہدہ عموماً نمائشی تصور کیا جاتا ہے تاہم ملزم کی جانب سے کمپنی کے انتظامی معاملات میں غیر ضروری مداخلت رہی، لاہور پارکنگ کمپنی کا این ٹی جی کمپنی کے ساتھ پارکنگ ٹھیکوں کی مد میں معاہدہ کیا گیا، معاہدے کیمطابق 246 پارکنگ سائٹس این ٹی جی کے حوالے کرنا تھیں تاہم صرف 33 سائٹس ہی حوالے کی جا سکیں۔نیب لاہور کیجانب سے پارکنگ کمپنی کیس میں 26 اپریل 2018 کو سابق سی او تاثیر احمد سمیت 5 ملزمان کو گرفتار کیا گیا تھا۔نیب حکام ان ملزمان سے 8 کروڑ روپے برآمد بھی کروائے جاے چکے ہیں جبکہ وصول شدہ رقم سے 7 کروڑ 13 لاکھ روپے متعلقہ ادارے کو واپس لوٹائے بھی جا چکے ہیں۔

Translation

اداریہ

آج کی تصویر

مقبول ترین

Whatsapp نیوز سروس

Advertise Here

ضرورت نمائیندگان

روزنامہ جواب

ضرورت نمائیندگان

Coverage

Currency

WP Facebook Auto Publish Powered By : XYZScripts.com