We are committed to reporting the facts and in all situations avoid the use of emotive terms.

بریکنگ نیوز
english logo

شوگر آنکھوں ،گردوں اوردیگر اعضاء کو متاثر اور ٹی بی کے خطرے کا باعث بنتی ہے، طبی ماہرین

شوگر آنکھوں ،گردوں اوردیگر اعضاء کو متاثر اور ٹی بی کے خطرے کا باعث بنتی ہے، طبی ماہرین

مرض سے بچنے کیلئے ادویات کے علاج ہمیں اپنی خوراک ، واک اور ورزش کا خیال رکھنا ہو گا، پروفیسر طیب
جنرل ہسپتال کے شوگر سینٹر میں15ہزار سے زائد رجسٹرڈ مزیضوں کو طبی و تشخیصی سہولیات کی مفت فراہمی
لاہور(یو این این )ذیابیطس کے عالمی دن کے موقع پر لاہور جنرل ہسپتال میں پرنسپل پروفیسر محمد طیب کی زیر قیادت آگاہی واک اور سیمینار کا انعقاد کیا گیا جس میں شوگر سپیشلسٹ ڈاکٹر عمران حسن خان ،پروفیسر معین ،ڈاکٹر اسرار الحق طور ، ایم ایس ڈاکٹر محمود صلاح الدین،ڈاکٹر سلمان شکیل ، ڈاکٹر رانا آصف صغیر ، ڈٖاکٹر مقصود اور دیگر طبی ماہرین کے علاوہ کامیڈی کنگ امان اللہ اور عدیل ہاشمی کے علاوہ ادارہ اخو ت کے سربراہ ڈاکٹر امجد ثاقب بھی شریک تھے ۔طبی ماہرین نے شوگر کی علامات،اس کی پیچیدگیوں اور علاج معالجے پر تفصیلی روشنی ڈالی۔جبکہ فری کیمپ میں متعدد مریضوں کے ٹیسٹ بھی کئے گئے جن میں سے کئی لوگ شوگر کے مرض سے لا علم نکلے۔پرنسپل امیر الدین میڈیکل کالج پروفیسر ڈاکٹر طیب نے عوامی شعور اجاگر کر نے کیلئے سمینار اور واک کو مستقل بنیادوں پر کروانے پر ڈاکٹر عمران حسن خان اور ان کی ٹیم کی کاوشوں کو سراہا ۔ پرنسپل پروفیسر محمد طیب نے سمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ شوگر کی بیماری آنکھوں ،گردوں اوردیگر انسانی اعضاء کو متاثر کرنے کے ساتھ ساتھ ٹی بی کے خطرے کا باعث بھی بنتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ انسانی جسم میں شکر کی مقدا ر کا توازن برقرار رکھنے کیلئے ادویات کے علاج ہمیں اپنی خوراک ، واک اور ورزش کا خیال رکھنا ہو گا ،انہوں نے کہا کہ ذیابیطس کے عالمی دن کے انعقاد کا مقصد لوگوں میں اس موذی مرض کے بارے میں شعور بیدار کرنا ہے ،پاکستان میں بد قسمتی سے روز بروز اس مرض میں اضافہ ہو رہا ہے اور عمر کی تخصیص کے بغیر بچوں اور خواتین میں بھی شوگر کی بیماری پھیل رہی ہے۔پروفیسر محمد طیب نے کہا کہ بروقت تشخیص اور مناسب علاج سے اس مرض کی پیچیدگیوں سے بچا جا سکتا ہے ۔دیگر مقررین نے بھی شوگر کے مرض اور بالخصوص خواتین اور بچوں میں اس بیماری کے حوالے سے پائی جانے والی پیچیدگیوں کو اجاگر کیا اور لاہور جنرل ہسپتال کے شعبہ ذیابیطس میں دی جانے والی سہولیات کا ذکر کیا ،ایم ایس ڈاکٹر محمود صلاح الدین نے بھی سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹروں اور نرسز پر زور دیا کہ وہ ذیابیطس کے مریضوں کو خصوصی طور پر فوکس کریں اور انہیں طبی سہولتوں کی فراہمی کے علاوہ کونسلنگ کی سہولت بھی مہیا کریں تاکہ یہ مریض اپنے خاندان کے دیگر افراد کو اس بیماری سے بچا سکے ،ڈاکٹر عمران حسن خان نے سیمینار میں بتایا کہ جنرل ہسپتال کے شوگر سینٹر میں اب تک 15ہزار سے زائد مزیض رجسٹرڈ ہیں جنہیں ذیابیطس کے علاج معالجے کی ہر ممکن سہولت بہم پہنچائی جا رہی ہے ۔سیمینار سے قبل لاہو ر جنرل ہسپتال میں ذیابیطس کے حوالے سے واک کا انعقا د کیا گیا جبکہ ڈاکٹروں اور نرسز سمیت مریضوں اور اُن کے عزیز و اقارب کی بڑی تعداد میں شرکت کی ،واک کے شرکاء نے پلے کارڈ اور بینر اٹھا رکھے تھے جن پر سلوگن درج تھے کہ” ورثے میں جائیداد ہی نہیں شوگر بھی ملتی ہے "،متوازن غذااور ورزش ذیابیطس کو روکنے میں مدد گار ثابت ہوتی ہے اور ذیابیطس میں بے احتیاطی پاؤں یا ٹانگ کاٹنے کا سبب بن سکتی ہے ،اسی طرح شرکاء میں آگاہی پمفلٹ بھی تقسیم کیے گئے۔

Translation

اداریہ

آج کی تصویر

مقبول ترین

Whatsapp نیوز سروس

Advertise Here

ضرورت نمائیندگان

روزنامہ جواب

ضرورت نمائیندگان

Coverage

Currency

WP Facebook Auto Publish Powered By : XYZScripts.com