We are committed to reporting the facts and in all situations avoid the use of emotive terms.

بریکنگ نیوز
english logo

سرپلس شدہ بجٹ کسی کا صوابدیدی فنڈ نہیں صوبے کی ترقی پر ہی خرچ کیا جائے گا، مخدوم ہاشم

سرپلس شدہ بجٹ کسی کا صوابدیدی فنڈ نہیں صوبے کی ترقی پر ہی خرچ کیا جائے گا، مخدوم ہاشم

موجودہ حکمت عملی گزشتہ حکومت کی ناقص مالیاتی منصوبہ بندی کی اصلاح کیلئے ہے، انفراسٹریکچر کو نظر انداز نہیں کیا گیا
پرائیویٹ پبلک پارٹنر شپ پروجیکٹس میں پرائیویٹ پارٹنرز کو بھر پور مواقع دئیے جائیں گے، پوسٹ بجٹ پریس کانفرنس

لاہور(یو این این )پنجاب کا مفاد عزیز ہے ۔قومی مالیاتی کمیشن میں بھر پور تیاری کے ساتھ جائیں گے ۔ ماضی میں وفاقی و صوبائی حکومت کے مابین مالی معاملات کے مسائل کو نظر انداز کیا جاتا رہا ۔ تحریک انصاف کی حکومت یہ غلطی نہیں دہرائے گی ۔ سرپلس شدہ بجٹ کسی کا صوابدیدی فنڈ نہیں صوبے کی ترقی پر ہی خرچ کیا جائے گا۔پنجاب حکومت نومبر میں آئندہ پانچ سال کی ترقیاتی منصوبہ بندی پیش کرے گی۔ترقیاتی منصوبہ بندی کا فوکس صوبے کی معاشی ترقی اور سوشل سیکٹر میں بہتری ہو گا۔پنڈی رنگ روڈ کا جلد اعلان کیا جائے گا ۔پرائیویٹ پبلک پارٹنر شپ پروجیکٹس میں پہلے کی طرح صرف پبلک ہی پبلک نظر نہیں آئے گی پرائیویٹ پارٹنرز کو بھر پور مواقع دئیے جائیں گے۔ ان خیالات کا اظہار صوبائی وزیر خزانہ مخدوم ہاشم جواں بخت نے بدھ کے روز محکمہ خزانہ کے زیر اہتمام پوسٹ بجٹ پریس بریفنگ کے دوران کیا۔ اس موقع پر ان کے ساتھ صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت، وزیر صحت یاسمین راشد ، وزیر برائے اصلات و ثقافت فیاض الحسن چوہان ، سیکرٹری خزانہ شیخ حامد یعقوب ، چےئرمین پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ حبیب الرحمان اورچےئرمین پی آر اے جاوید احمد بھی موجود تھے ۔ صوبائی وزیر خزانہ نے کہا کہ وفاق کی درخواست پر بجٹ میں سرپلس مختص کرنے پر کسی کو یہ غلط فہمی نہیں ہونی چاہیے کہ ہم صوبے کی ترقی پر کوئی سمجھوتہ کر رہے ہیں۔ موجودہ حکمت عملی گزشتہ حکومت کی ناقص مالیاتی منصوبہ بندی کی اصلاح کے لیے اختیار کی گئی ہے۔ بجٹ میں انفراسٹریکچر کو نظر انداز نہیں کیا گیا ہے۔ جہاں ضرورت ہے وہاں تعمیر اور مرمت کا کام جاری ہے ۔ تعلیم اور صحت کے بجٹ میں اضافہ دراصل اس تبدیلی کی جانب ایک قدم ہے جس کا اپنی عوام سے وعدہ کرتے آئے ہیں۔ کسان کی ترقی پنجاب کی ترقی ہے۔ گزشتہ حکومت کی جانب سے دئیے جانے والے کسان پیکج نے کسانوں کو 30فیصد جبکہ بنکوں کو 80فی صد فائدہ پہنچایا۔ تحریک انصاف کے بجٹ میں کسانوں کی مالی معاونت کے لیے مختص کردہ,000 250ملین اور 15,000 ملین کے بلا سود قرضے براہ راست کسانوں ہی کو فائدہ پہنچائیں گے ۔ پنجاب میں پیشہ ورانہ سرگرمیوں کے ذریعے ترقی اور روزگار میں اضافے کے لیے 600ملین کی لاگت سے منصوبے کا آغاز کر رہے ہیں ۔ اس مقصد کے لیے رواں مالی سال کے بجٹ میں 300ملین مخصوص کیے گئے ہیں ۔اس کے علاوہ 550,000نوجوانوں کی سکلز ٹریننگ کے لیے 433ملین مختص کیے گئے ہیں۔ تحریک انصاف کی حکومت میں پورے پنجاب کی حکومت ہے جس میں پورا پنجاب ترقی کرے گا۔ پچھلے دور حکومت میں جنوبی پنجاب کو واضح طور پر نظر انداز کیا گیا اس لیے رواں مالی سال کے بجٹ کا زیادہ تر رجحان جنوبی پنجاب کی جانب ہے۔ وزیر قانون راجہ بشارت نے اٹھارویں ترمیم سے متعلقہ سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ اٹھارویں ترمیم میں صوبوں کو جو اختیارات منتقل ہوئے ہیں ان پر تحریک انصاف کو کل بھی تحفظات تھے اور آج بھی ہیں تاہم اس سے متعلق معاملات کو جلد حل کر لیا جائے گا۔

Translation

اداریہ

آج کی تصویر

مقبول ترین

Whatsapp نیوز سروس

Advertise Here

ضرورت نمائیندگان

روزنامہ جواب

ضرورت نمائیندگان

Coverage

Currency

WP Facebook Auto Publish Powered By : XYZScripts.com