We are committed to reporting the facts and in all situations avoid the use of emotive terms.

بریکنگ نیوز
english logo

سابق ڈی جی نور الامین مینگل کی پنجاب فوڈ اتھارٹی میں لوٹ مار

سابق ڈی جی نور الامین مینگل کی پنجاب فوڈ اتھارٹی میں لوٹ مار

انٹرنیشنل فوڈ میلہ کی مد میں وصول ہونے والے کروڑوں روپے غیر قانونی اکاؤنٹ میں جمع کرائے
تشہیر کا ٹھیکہ بھی پیپرا رولز کی دھجیاں بکھیرتے ہوئے من پسند سرکاری ملازم ندیم ہاشمی کی فرم کو دیا
ن لیگی حکومت کے منظور نظررہے ، جہاں بھی تعینات ہوئے کرپشن کی ایک نئی تاریخ رقم کر گئے، ذرائع
لاہور(قیصر مغل/ یاسر بخاری/یو این این ) پنجاب فوڈ اتھارٹی کے سابق ڈائریکٹر جنرل نور الامین مینگل کی جانب سے اتھارٹی میں بڑے پیمانے پر مالی بے ضابطگیوں ، اختیارات کے ناجائز استعمال اور اقربا پروری کا انکشاف ہواہے ۔مالی سال 2017-18 کے دوران پنجاب فوڈ اتھارٹی کی جانب سے منعقد کئے گئے انٹرنیشنل فوڈ فیسٹیول سے ہونے والی آمدن کو اتھارٹی کے سرکاری اکاؤنٹ میں جمع کرانے کی بجائے ذاتی اکاؤنٹ میں جمع کرانے کے بعد ہڑپ کر لی گئی ۔سابق ڈی جی فوڈ اتھارٹی نے پیپرا رولز کی دھجیاں بکھیرتے ہوئے فوڈ فیسٹیول کی تشہیر کا ٹھیکہ بھی من پسند شخص کو مہنگے ریٹ پر دیا ۔اس حوالے سے ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ پنجاب فوڈ اتھارٹی کے سابق ڈائریکٹر جنرل نورالامین مینگل مسلم لیگ ن کی حکومت کے منظور نظر تھے اور وہ جہاں بھی تعینات ہوئے وہاں پر کرپشن کی ایک نئی تاریخ رقم کر گئے ، فیصل میں بطور ڈی سی او تعیناتی کے دوران بھی بڑے پیمانے پرکرپشن کے الزامات لگے اور اس حوالے سے نیب نے انکوائری شروع کر دی ہے ، نور الامین مینگل نے بطور ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی ادارے کو ذاتی جاگیر بنا رکھا تھا اور مسلم لیگ ن کی سابق حکومت کی آشیر باد سے دھرلے سے اختیارات کا ناجائز استعمال ، اقربا پروری اور کرپشن کی انتہا کر دی ۔پنجاب فوڈ اتھارٹی نے مالی سال 2017-18 کے دوران ایکسپو سنٹر لاہور میں انٹرنیشنل فوڈ میلہ کا اہتمام کیا جس میں سینکڑوں مقامی اور بین القوامی تقریبا 108 فوڈ کمپنیوں نے سٹاالز لگائے ، بڑی کمپنیوں سے فی سٹال 4 لاکھ ، درمیانی کمپنیوں سے فی سٹال 3 لاکھ جبکہ چھوٹی کمپنیوں سے فی سٹال 2 لاکھ روپے کے حساب سے سوا تین کروڑ روپے سے زائد رقم وصول کی گئی ۔ پنجاب فوڈ اتھارٹی نے فوڈ میلہ میں شرکت کرنے والی کمپنیوں سے وصول کی جانے والی رقوم کو جمع کرانے کیلئے سرکاری اکاؤنٹ کھولا لیکن سابق ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی نورالامین مینگل نے اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے انٹرنیشنل فوڈ میلہ میں شرکت کرنے والی کمپنیوں سے وصول ہوکی گئی رقوم اورحکومت کی جانب سے موصول ہونے والے فنڈز کو ڈیپازٹ کرانے کیلئے وحدت روڈ پر واقع الائیڈ بنک کی برانچ میں ایک غیر قانونی اکاؤنٹ نمبر 0010043565200046 کھلوایا اور فوڈ میلہ کے سپانسر ، شرکت کرنے والی کمپنیوں سے سٹالز کی مد میں حاصل ہونے والی رقوم اس غیر قانونی اکاؤنٹ میں جمع کرائیں ، حکومت سے موصول ہونے والے فنڈز بھی اسی اکاؤنٹ میں جمع کروائے گئے ۔ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ سابق ڈی جی فوڈ اتھارٹی نور الامین مینگل نے اتھارٹی کا ذاتی جاگیر بنا یا ہو ا تھا اور قوانین کو روندتے ہوئے پنجاب فوڈ اتھارٹی میں جنگل کا قانون نافذ کر رکھا تھا اور اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے من پسند افراد کو نوازا، انٹرنیشنل فوڈ میلہ کی تشہیر کا ٹھیکہ بھی پیپرا رولز کی دھجیاں بکھیرتے ہوئے من پسند شخص ندیم ہاشمی کو نوازنے کیلئے دیا ، ندیم ہاشمی کے بارے میں پتہ چلا ہے کہ وہ ایک سرکاری ملازم ہے اور رولز کے مطابق کوئی بھی سرکاری ملازم کسی قسم کا سرکاری ٹھیکہ نہیں لے سکتا لیکن سابق ڈی جی نور الامین مینگل نے اسے نوازنے کے لئے غیر قانونی طور پر نہ صرف ٹھیکہ اسے دیا بلکہ ریٹ بھی مارکیٹ سے زیادہ رکھے ۔ ذرائع نے یہ بھی کہا ہے کہ فوڈ میلہ کی تشہیر اور ایکسپوسنٹر کے کرایہ کے نام پر 70 لاکھ روپے کی ادائیگی کی گئی جبکہ باقی رقم ہڑپ لی گئی ۔

Translation

اداریہ

آج کی تصویر

مقبول ترین

Whatsapp نیوز سروس

Advertise Here

ضرورت نمائیندگان

روزنامہ جواب

ضرورت نمائیندگان

Coverage

Currency

WP Facebook Auto Publish Powered By : XYZScripts.com