We are committed to reporting the facts and in all situations avoid the use of emotive terms.

بریکنگ نیوز
english logo

جاری منصوبہ جات کی تکمیل کیلئے جانچ پڑتال کے بعد کیبنٹ کمیٹی سے منظوری لی جائیگی، مخدوم ہاشم

جاری منصوبہ جات کی تکمیل کیلئے جانچ پڑتال کے بعد کیبنٹ کمیٹی سے منظوری لی جائیگی، مخدوم ہاشم

پنجاب حکومت ٹیکس ادا کرنے والی کمپنیوں کے ساتھ مکمل تعاون کر رہی ہے اور ان کے لیے ہر ممکن آسانی پیدا کی جا رہی ہے

لاہور(یو این این)صوبائی وزیر خزانہ مخدوم ہاشم جواں بخت کی زیر صدارت پنجاب میں پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ سے جاری پاور پروجیکٹس کے مالیاتی اُمور سے متعلق جائزاجلاس بدھ کے روز گزشتہ روز پنجاب ریونیو اتھارٹی کے ہیڈ آف میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں صوبائی وزیر پرائے توانائی ڈاکٹر اختر ملک ، سیکرٹری انرجی عامر جان، سپیشل سیکرٹری فنانس مجاہد شیر دل ،چیف ایگزیکٹو آفیسر قائد اعظم سولر پاور پلانٹ، چیف ایگزیٹو آفیسر پنجاب انرجی ایفیشنسی اینڈ کنزرویشن ایجنسی اور دیگر متعلقہ افسران نے شرکت کی۔ سیکرٹری انرجی نے اجلاس کو توانائی کے تمام زیر تکمیل منصوبوں سے متعلق بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ حکومت کی تبدیلی کے دوران کئی پروجیکٹس پر کام روک دیا گیا تھا تاہم ان کے لیے خام مال اور انفراسٹریکچر کی نشاندہی و خریداری کی جا چکی ہے۔ اجلاس میں صوبائی وزراء کو زیر بحث منصوبہ جات کے لیے تخمینہ شدہ لاگت، جاری کردہ فنڈز اور آئندہ اخراجات کی تفصیلات سے بھی آگاہ کیا گیا اور منصوبہ جات کی تکمیل کے لیے سفارشات پیش کی گئیں۔ اس موقع پر صوبائی وزیر خزانہ مخدوم ہاشم جواں بخت نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ توانائی کے بحران کا خاتمہ پورے ملک کا مشترکہ مسئلہ ہے ۔ سوشل سیکٹر کے بہت سے مسائل اس ایک مسئلہ سے جڑے ہیں اس لیے اسے قطعاً نظر انداز نہیں کیا جا سکتا تاہم ضروری ہے کہ اس کے لیے وفاقی حکومت کے ساتھ بیٹھ کر باقاعدہ پالیسی تشکیل دی جائے جس میں ہر صوبہ اپنا کردار ادا کرے۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ جاری منصوبہ جات کی تکمیل کو یقینی بنانے کے لے�آائندہ اخراجات کی جانچ پڑتال کے بعد کیبنٹ کمیٹی سے منظوری لی جائے گی اورکرپشن کے امکانات کو کنٹرول کیا جا ئے گا۔ صوبائی وزیر نے انرجی ڈیپارٹمنٹ کو ہدایت کی کے وہ پاور پروجیکٹس سے متعلقہ معاملات پر وفاق کے ساتھ رابطے میں رہیں تا کہ پالیسی سازی کے عمل کو آگے بڑھایا جا سکے۔ اس سے قبل صوبائی وزیر خزانہ نے پی آر اے میں نیسلے پاکستان کے نمائندگان سے بھی ملاقات کی۔ملاقات کا مقصدسیلز ٹیکس آن سروسز سے متعلقہ معاملات پر سفارشات کا جائزہ لیناتھا۔اس موقع پر خطاب کرتے صوبائی وزیر نے کہا کہ حکومت پنجاب ٹیکس ادا کرنے والی کمپنیوں کے ساتھ مکمل تعاون کر رہی ہے اور ان کے لیے ہر ممکن آسانی پیدا کی جا رہی ہے ۔ بطور سٹیک ہولڈرز کاروباری افراد کی بھی یہ ذمہ داری ہے کہ وہ حکومت کے ساتھ تعاون کریں اور اپنا واجب ادلاء ٹیکس ادا کر کے عوام کو بنیادی سہولیات کی فراہمی میں حکومت کا ساتھ دیں۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ ملکی معیشت کا استحکام تمام سٹیک ہولڈز کی مشترکہ ذمہ داری ہے ۔ اس ضمن میں موجودہ حکومت پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ پر بھی سرمایہ کاری کر رہی ہے ۔

Translation

اداریہ

آج کی تصویر

مقبول ترین

Whatsapp نیوز سروس

Advertise Here

ضرورت نمائیندگان

روزنامہ جواب

ضرورت نمائیندگان

Coverage

Currency

WP Facebook Auto Publish Powered By : XYZScripts.com