We are committed to reporting the facts and in all situations avoid the use of emotive terms.

بریکنگ نیوز
english logo

بیت المقدس میں عیسائیوں کا مذہبی مرکز تین روزہ بندش کے بعد دوبارہ کھول دیا گیا

بیت المقدس میں عیسائیوں کا مذہبی مرکز تین روزہ بندش کے بعد دوبارہ کھول دیا گیا

مقبوضہ بیت المقدس(یو این این)فلسطین کے مقبوضہ بیت المقدس میں قائم عیسائی دنیا کی مقدس عبادت گاہ القیامہ چرچ کو تین روزہ بندش کے بعدگزشتہ روز بدھ سے زائرین کیلئے دوبارہ کھول دیا گیا۔خیال رہے کہ اسرائیلی حکومت کی طرف سے بیت المقدس میں گرجا گھروں کی املاک پر ٹیکس عائدکئے جانے کے بعد گذشتہ اتوار کو القیامہ چرچ کو زائرین کیلئے تا اطلاع ثانی بند کردیا گیا تھا۔القدس میں گرجا گھروں کے منتظمین کا کہنا ہے کہ رومن، لاتین اور ارمن یہودی فرقوں نے ارنونا نامی اسرائیلی ٹیکس کو مسترد کرتے ہوئے اسرائیل سے ٹیکس واپس لینے کا مطالبہ کیا تھا۔خیال رہے کہ القیامہ چرچ کی بندش کا یہ پہلا واقعہ نہیں۔ 1990 میں بھی اس گرجا گھر کو اس وقت 48 گھنٹے کیلئے بند کردیا تھا جب ایک یہودی تنظیم نے القیامہ چرچ کے بالمقابل دیر مار یوحنا مہمان خانہ کی عمارت پر قبضہ کرلیا تھا۔گذشتہ دنوں اسرائیلی بلدیہ نے القدس کے گرجا گھروں پر ارنونا ٹیکس عائد کیا جس پر عیسائی برادری کی طرف سے شدید احتجاج کیا گیا۔گزشتہ روز اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو نے ایک بیان میں کہا کہ القیامہ چرچ اور دیگر گرجا گھروں کی املاک پرعاید کردہ ٹیکسوں کا فیصلہ واپس لے لیا گیا ہے۔خیال رہے کہ فلسطین کے مسیحی رہ نماں نے چرچوں کے زیرانتظام املاک پر ٹیکسوں کے نفاذ حد درجہ خطرناک اقدام قرار دیا تھا۔ گذشتہ اتوار کو اسرائیلی ٹیکسوں کے نفاذ کے بعد القیامہ گرجا گھر کوبہ طور احتجاج بند کردیا گیا تھا۔رومن کیتھولک ، رومن ارتھوڈوکس اور ارمن چرچ کی طرف سے گرجا گھروں کی املاک پر ٹیکسوں کی مذمت کرتے ہوئے صہیونی ریاست کے اقدام کیخلاف احتجاج کا فیصلہ کیا تھا۔آج بدھ کو مقامی وقت کے مطابق صبح چار بجے القیامہ چرچ کو کھول دیا گیا ہے۔

Translation

اداریہ

آج کی تصویر

مقبول ترین

Whatsapp نیوز سروس

Advertise Here

ضرورت نمائیندگان

روزنامہ جواب

ضرورت نمائیندگان

Coverage

Currency

WP Facebook Auto Publish Powered By : XYZScripts.com